شہر شہر


  وقت اشاعت: 1 دن پہلے 

مفکرِ اسلام اور مصورِ پاکستان علامہ اقبال نے جہاں مروجہ جمہوریت کو جمہوری تماشا سے تعبیر کیا ہے وہاں سچے اور کھرے جمہوری نظام کو روحانی جمہوریت کا عنوان بخشا ہے۔ پاکستان میں ہماری سیاست دائرے میں گردش کرتی چلی آ رہی ہے- ہرچند برس بعد ہم گھوم پھر کر اُسی مقام پر آ پہنچتے ہیں جہاں سے چلے تھے- اس لاحاصل پاکوبی کا سب سے بڑا سبب خود ہمارے اپنے بالادست طبقات ہیں- جب تک اقتدار ان طبقات کے مخصوص مفادات کے نگہبانوں کی گرفت میں رہے گا، عوام کے دیدہ و دل کی نجات کی گھڑی مسلسل دور سے دور ہوتی چلی جائے گی- اقبال نے سچ کہا تھا:
مجلسِ ملت ہو یا پرویز کا دربار ہو
ہے وہ سلطاں غیر کی کھیتی پہ ہو جس کی نظر
جلالِ پادشاہی ہو کہ جمہوری تماشا ہو
جُدا ہو دیں سیاست سے تو رہ جاتی ہے چنگیزی

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 3 دن پہلے 

گئے وقتوں کی بات ہے۔  اٹھارہ انیس سال عمر تھی۔ ہم  گھر کے اوپر والے حصے میں  اپنے بھائی  کے ساتھ رہا کرتے تھے۔  نیچے والے حصے کے باورچی خانے سے اوپر کے گھر کو سیڑھیاں  جاتی تھیں۔ سیڑھیوں کے اختتام پر اوپر کے گھر کا دروازہ تھا۔ دروازے کے بالکل ساتھ ایک ایک چھوٹی سی بالکنی تھی جس کی اونچائی کی وجہ سے وہاں سے کسی کا آنا ممکن نہ لگتا تھا۔ شاید اسی لئے ہم نے کبھی مرکزی دروازہ لاک کرنے کی ضرورت محسوس نہ کی۔   ہمارے کمرے کا دروازہ مرکزی دروازے کے بالکل ساتھ ہی تھا۔  اوپر والے گھر میں تین کمرے تھے اور  تینوں کمروں کے دروازے سامنے برآمدے  میں کھلتے تھے۔ جو ہم رات کو لاک  کر کے سویا کرتے تھے۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 7 دن پہلے 

ڈاکٹر عاطف میاں کا تعلق پاکستان سے ہے۔ ایم آئی ٹی کیمبرج کے فاضل ہیں۔ ریاضیات اور کمپیوٹر سائنس میں تعلیم پائی ہے۔ معاشیات میں پی ایچ ڈی کی سند رکھتے ہیں۔ شکاگو یونیورسٹی اور کیلیفورنیا یونیورسٹی میں تدریس کرچکے ہیں۔ نیو جرسی کی پرنسٹن یونیورسٹی میں تدریسی و تحقیقی خدمات انجام دے رہے ہیں۔ سنہ 2001میں آپ نے معاشیات میں پی ایچ ڈی کی اور 2014 میں آئی ایم ایف نے دنیا کے پچیس کم عمر ترین ماہرین معاشیات میں آپ کا نام شامل کیا۔ آپ “House of Debt” نامی کتاب کے مصنف بھی ہیں۔ فائننشل ٹائمز نے اس کتاب کو اپنے موضوع پر سال کی سب سے بہترین کتاب قرار دیا ۔ یونیورسٹی آف شکاگو پریس سے اس کتاب نے بہترین کتاب کا ایوارڈ بھی حاصل کیا۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 08 2017

یوں محسوس ہوتا ہے جیسے دو نااہل سیاستدان نواز شریف اور الطاف حسین لندن میں بیٹھے ایک نئے NRO کی تلاش میں امریکی حکومت کے دروازوں پر دستک دینے میں مصروف ہوں۔ ایسے میں مجھے پرانے نام نہاد قومی اتفاقِ رائے NRO کے باب میں بھارت کے نامور صحافی کلدیپ نیّر کا ایک پرانا کالم یاد آ رہا ہے۔ امریکی خوشنودی اور شفاف جمہوریت کی تلاش کے راستے الگ الگ ہیں۔ ستم ظریفی یہ ہے کہ پرانا NRO  امریکہ کی چاکری اور جنوبی ایشیا میں بھارت کی سامراجی بالادستی کے باب میں خاموش ہے۔ جناب کلدیپ نیّر نے اپنے کالم بعنوان نئی راہِ عمل کا انتخاب (Charting a new course?, Dawn, June 5, 2006) میں اِس خاموشی کو توڑا تھا۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 07 2017

ایک چینی کہاوت ہے کہ جب دشمن کو گھیرا ڈالو تو اس کے بھاگنے کے لیے ایک راستہ ضرور کھلا رکھو۔ ہو سکتا ہے اسی راستے سے پھر تمھیں بھاگنا پڑا۔ ہم جگاڑی قوم تو ہیں نہیں، پکا کام کرنے پر یقین رکھتے ہیں۔ پکا کام کر بیٹھے ہیں سب نے ہی سب کو بڑا ٹھیک گھیر لیا ہے۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 24 ستمبر 2017

یہ  کسی خاص سکول کی کہانی نہیں آج پاکستان میں ہر پرائیویٹ سکول کو عوام کی جیبوں پر ڈاکہ ڈالنے کی کھلی چھٹی ہے۔ زیر نظر تصویر نرسری کلاس کے بچے کے سکول داخلہ کا فیس چلان ہے جو کہ مبلغ ڈیڑھ لاکھ روپے ہے۔ داخلہ فیس کے علاؤہ جنریٹر چارجز، سیکورٹی چارجز، رجسڑیشن چارجز، ریسورس چارجز اور دیگر غیر ضروری چارجز اس چلان کا حصہ ہیں۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 22 ستمبر 2017

نورین لغاری کا داعش میں شامل ہونا، عبدالولی خان یونیورسٹی میں مشال خان کو تشدد کا نشانہ بنانا، سبین محمود کے قتل کے علاوہ اب دہشت گرد تنظیم 'انصار الشرعیہ پاکستان' میں اعلٰی تعلیم یافتہ نوجوانوں کا ملوث پایا جانا، ایسے واقعات ہیں جو ہماری نوجوان نسل کو دہشت گرد قوتوں کی تشدد پسندانہ سوچ کے سامنے غیر محفوظ ثابت کرتے ہیں۔  یہی واقعات اس تلخ حقیقت کی بھی عکاسی کرتے ہیں کہ تعلیم یافتہ نوجوانوں کا انتہا پسندی کی طرف بڑھتا ہوا جھکاؤ، پاکستان کو درپیش سیکورٹی خطرات میں ایک نیا چیلنج بن کر ابھرا ہے۔ جس سے نمٹنے کے لئے فی الفور کسی ایسی جامع حکمت عملی کی ضرورت ہے جو کہ  مؤثر تحقیق پر مبنی ہو۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 07 ستمبر 2017

اگرآپ کوکبھی میانوالی، چشمہ بیراج اور ڈی آئی خان والے علاقوں کی طرف سفر کرنے کا موقع ملا ہو تو آپ کو مرکزی سڑک کے ساتھ ساتھ  وقفے وقفے سے بہت سی ایسی قبریں ملیں گی جن پر پاکستان کا قومی پرچم لہرا رہا ہے۔ ایسے ہی کچھ مناظر ہمیں راولپنڈی سے چکوال جانے والی جی ٹی روڈ پر بھی دکھائی دیتے ہیں۔ اور یہی عالم پاکستان کے دیگر شہروں اور قصبوں کا بھی ہے۔  مرکزی سڑکوں کے علاوہ ان شہروں اور دیہاتوں کے وسط میں بھی ایسے قبرستان موجود ہیں جہاں ایسی لاتعداد قبریں حالیہ آٹھ نو سالوں میں بنیں ہیں۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 06 ستمبر 2017

چند سالوں سے پاکستان میں دہشتگردی کے  واقعات میں پاکستانی یونیورسٹیوں کے طلباء اور اساتذہ کے ملوث ہونے کے انکشافات نے قوم کو حیرانی میں مبتلا کردیا ہے۔  وہ ایم کیو ایم کے خواجہ اظہار الحسن پر حملہ ہو یا  صفورا گوٹھ میں ہونے والا دہشتگردی کا واقعہ ہو یا مردان یونیورسٹی کے طالبِ علم مشعال کا بہیمانہ قتل ان واقعات میں یونیورسٹی طلبہ اور پروفیسرز کا ملوث ہونا ایک بہت بڑا لمحہ فکریہ ہے ۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 04 ستمبر 2017

محمد یوسف بھی دنیا سے رخصت ہوگئے۔ دو ہفتے قبل ملاقات ہوئی تو زندگی میں پہلی دفعہ متفکر پایا۔ یوسف پرامید اور رجائیت پسند انسان تھے۔ شوگر کی وجہ سے بینائی متاثر ہوئی، پھر ٹانگ سے محروم ہوئے، بیماریوں سے نبرد آزما رہے لیکن کبھی مایوس دکھائی نہ دیئے۔ لیکن اس روز کہنے لگے اب میرے لئے دعا کریں کہ میں دنیا سے پردہ کر جاؤں۔ گردوں کے مرض کا شکار ہونے کے بعد ان کی ہمت جواب دے گئی تھی۔

مزید پڑھیں

Praise and prayers for the great people of Turkey

One year ago, this day, the people of Turkey set an example by defending their elected government and President Recep Tayyip Erdogan against military rebels.

Read more

loading...