بیک ڈور ڈپلومیسی؟ وزیراعظم نواز شریف سے بھارتی صنعتکار سجن جندال کی ملاقات

بیک ڈور ڈپلومیسی؟ وزیراعظم نواز شریف سے بھارتی صنعتکار سجن جندال کی ملاقات(nawaz-jandal-meeting)

 لاہور: مریم نواز نے وزیراعظم نوازشریف اور بھارتی بزنس مین جندال کے درمیان ملاقات کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ ملاقات کو سیاق وسباق سے ہٹ کر پیش نہیں کرنا چاہیے۔

بھارتی سرمایہ کارسجن جندال نے بھارتی تاجروں کے وفد کے ہمراہ پاکستان کا دورہ کیا اوربھارتی تاجروں کے وفد نے گزشتہ روز مری میں وزیراعظم نوازشریف سے  ملاقات کی۔ ذرائع کے مطابق ملاقات میں دونوں ملکوں کے تعلقات بھی زیرغور آئے جب کہ ملاقات پاک بھارت بیک ڈور ڈپلومیسی کا حصہ بھی ہوسکتی ہے۔ذرائع کے مطابق سجن جندال بھارتی وفد کے ہمراہ خصوصی طیارے کے ذریعے 11 بج کر 55 منٹ پر پہنچے جب کہ بھارتی وفد کا دفترخارجہ کے پروٹوکول آفیسر سعید خان نے استقبال کیا جب کہ استقبال کرنے والوں میں وزیر اعظم ہاوس کے پروٹوکول آفیسر عمران بھی شامل تھے۔ ملاقات کے بعد بھارتی وفد ساڑھے 6 بجے خصوصی طیارے سے واپس روانہ ہوگیا۔ دوسری جانب وزیراعظم نوازشریف کی صاحبزادی مریم نواز نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر اپنی ٹوئٹ میں وزیراعظم اور جندال کی ملاقات کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ ملاقات خفیہ نہیں تھی اور جندال وزیر اعظم کے پرانے دوست ہیں جب کہ وزیراعظم کی جندال سے ملاقات کو سیاق وسباق سے ہٹ کر پیش نہیں کرنا چاہیے۔

عمران خان کے الزامات پر قانونی کارروائی کا فیصلہ(pm-meeting-on-imran-allegations)

عمران خان کے الزامات پر قانونی کارروائی کا فیصلہ

وزیراعظم نوازشریف کے زیر صدارت مسلم لیگ (ن) کا اہم اجلاس ہو اجس میں عمران خان کے الزامات کو مسترد کرتے ہوئے ان کے خلاف قانونی کارروائی کا فیصلہ کیا گیا۔

’احسان اللہ کے انکشافات سے بھارتی عزائم بے نقاب‘(fo-statement)

’احسان اللہ کے انکشافات سے بھارتی عزائم بے نقاب‘

ترجمان دفتر خارجہ کا کہنا ہے کہ کلھبوشن یادیو اور کالعدم ٹی ٹی پی کے سابق ترجمان احسان اللہ احسان کے انکشافات نے بھارت کے مذموم عزائم کو بے نقاب کرديا ہے۔

مشال خان قتل کیس کا مرکزی ملزم گرفتار(mashal-khan-murder-case)

مشال خان قتل کیس کا مرکزی ملزم گرفتار

مردان کی عبدالولی خان یونیورسٹی کے طالب علم مشال خان کی توہین مذہب کے الزام میں ہجوم کے ہاتھوں ہلاکت کے واقعے کے مرکزی ملزم کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔

loading...

بھارتی وفد کا دورہ: مفاہمت کا پیغام یا عیارانہ چال

بھارتی صنعتکار سجن جندال کی قیادت میں ایک تین رکنی وفد نے کل مری میں وزیراعظم نواز شریف سے ملاقات کی ہے۔ اگرچہ نہ تو اس خبر کی تصدیق کی گئی ہے اور نہ ہی ملاقات کا ایجنڈا سامنے آیا ہے تاہم پاکستانی میڈیا میں خبر شائع کی گئی ہے کہ سجن جندال اپنے دو ساتھیوں سوکیف سنگھال اور وریندر بیر سنگھ کے ہمراہ کل صبح خصوصی جہاز میں کابل سے اسلام آباد پہنچے جہاں سے وہ تین گاڑیوں میں مری روانہ ہو گئے۔ مری میں اس وفد کی وزیراعظم نواز شریف سے ملاقات ہوئی اور انہوں نے دوپہر کا کھانا بھی وزیراعظم کے ساتھ کھایا۔ خبروں میں یہ بھی بتایا گیا ہے کہ سجن جندال نے وزیراعظم نریندر مودی کا ایک خط نواز شریف کو پہنچایا اور اس ملاقات میں شنگھائی تعاون تنظیم SCO کے اجلاس کے موقع پر دونوں لیڈروں کی ملاقات کے حوالے سے بھی بات ہوئی۔ میاں نواز شریف اور سجن جندال کے درمیان دوستی اور تعلق کی خبریں ماضی میں بھی سامنے آتی رہی ہیں۔ دسمبر 2015 میں وزیراعظم نواز شریف کی نواسی کی شادی کے موقع پر وزیراعظم مودی کی اچانک لاہور آمد کا انتظام بھی سجن جندال نے کیا تھا۔ ایک بھارتی وفد کی پاکستان آمد اور وزیراعظم سے ملاقات سے دونوں ملکوں کے درمیان اختلافات ختم کرنے اور مذاکرات شروع کرنے کی راہ ہموار ہو سکتی ہے۔ تاہم اس وقت پاکستان کے سیاسی حالات، پاکستان کے معاملات میں بھارتی مداخلت کے الزامات اور بھارتی جاسوس کلبھوشن یادیو کو پھانسی کی سزا کے تناظر میں بھارتی وفد کے اس اچانک دورہ کو شبہ کی نگاہ سے بھی دیکھا جائے گا۔

آئی سی سی: نیا مالیاتی ماڈل منظور(icc-approves-new-financial-model)

آئی سی سی: نیا مالیاتی ماڈل منظور

دبئی: انٹرنیشنل کرکٹ کونسل نے اپنے اہم اجلاس میں تنظیم کا نیا ترمیمی مالیاتی ماڈل منظور کر لیا، یہ ماڈل رواں برس جون میں آئی سی سی فل کونسل کے سامنے توثیق کے لیے پیش کیا جائے گا۔

"اب غلطی سے بھیجا ہوامیسج واپس"

واشنگٹن: کئی بار ایسا ہوتا ہے کہ ہم کوئی میسج متعلقہ شخص کو بھیجنے کے بجائے دوسرے کو بھیج دیتے ہیں لیکن اب واٹس اپ نے اپنے صارفین کی اس مشکل کو بھی حل کرنے کا فیصلہ کرلیا ہے۔

Islamic Council Norway Fails Muslims and the Society

By hiring Nikab-wearing Leyla Hasic, Islamic Council Norway has taken a clear stand in a controversial debate. Norwegian Muslims neither are represented nor served with t

Read more

loading...